انتہائی فضول اور بورنگ اعادہ ء جاں گذارشات 2

مصنفہ کا انتہائی احمقانہ انداز یہ ہے کہ وہ مردوں کے جمال کی تعریف میں گڈے گوٹون نہیں ڈوب جاتی بلکہ وہ اس کے قد و قامت پر مری جاتی ہے۔ گویا قد کا سیکس سے براہ راست تعلق ہو۔ معلوم نہیں کیوں کچھ عورتیں اپنی جنسی محرومی کا تدارک ضخیم ناول لکھ کر کرتی ہیں۔ قارئین کا نہ صرف وقت ضائع ہوتا ہے بلکہ انھیں اس ضخامت کی قیمت بھی ادا کرنی پڑتی ہے۔ اس وقت ضرورت ہے کہ سنجیدہ اور مخلص لکھاری ان خاتون مصنفہ پر کھل کر تنقید کریں تاکہ نئے قارئین کا وقت اور رقم ضائع نہ ہو۔
میں خواتین لکھاریوں سے اس قدر اکتا گیا ہوں کہ سوچتا ہوں صرف مرد لکھنے والوں کی تحریر ہی سے استفادہ کیا کروں۔
کراچی 27 نومبر 2016
محمد جاوید کلیم

About Muhammad Javed Iqbal Kaleem

A Reading, writing hobbyist. Like to exchange views so that informed decisions are made possible and the persistent false propaganda of the powers that be could be countered. I am a great believer in collective conscience of humanity as mankind has been bestowed with the capability to distinguish between good and bad. I am open to new views and ideas.
This entry was posted in Fiction. Bookmark the permalink.

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s